SS HEADMASTER/HEADMISTRESS JOBS IN PUNJAB 2015 output_ehG634 CTI JOBS IN PUNJAB cti jOBS

زائد عمر کی 2 ہزار لیڈی ہیلتھ ورکرزکو برطرف کرنے کی تیاریاں

زائد عمر کی 2 ہزار لیڈی ہیلتھ ورکرزکو برطرف کرنے کی تیاریاں

ہائی کورٹ کے حکم پر سیکڑوں لیڈی ہیلتھ ورکرز مستقل ہوگئیں، 60 سالہ اور زائد عمر کی ورکرز کو جوائننگ نہیں دی جارہی، تنخواہیں بند ہونے کا خدشہ، عمریں زائد ہیں تو مراعات کے ساتھ ریٹائر کیا جائے ، ہیلتھ ورکرز

کراچی سمیت سندھ بھر میں 23 ہزار سے زائد لیڈی ہیلتھ ورکرز میں سے سیکڑوں ورکرز کو مستقل کیے جانے کے لیٹر جاری کردیے گئے جبکہ 60سال سے زائد عمر کی تقریباً 2ہزار سے زائد لیڈی ہیلتھ ورکرز کی نوکریوں کو خطرات لاحق ہوگئے ہیں جس کی وجہ سے لیڈی ہیلتھ ورکرز اور ایسوسی ایشن کے عہدے داروں میں تشویش کی لہر دوڑ گئی۔ذرائع کے مطابق کراچی سمیت سندھ بھر میں گزشتہ کئی برسوں سے نیشنل پروگرام برائے خاندانی منصوبہ بندی،پولیو مہم سمیت دیگر مہمات میں خدمات سرانجام دینے والی 23 ہزار سے زائد لیڈی ہیلتھ ورکرز کو سپریم کورٹ کے احکامات کے بعد درجنوں لیڈی ہیلتھ ورکرز کو مستقل کیے جانے کے لیٹر جاری کیے جانے لگے ہیں تاہم 60 سال سے زائد عمر کی تقریباً2 ہزار سے زائد لیڈی ہیلتھ ورکرز کی نوکریوں کو خطرات لاحق ہوگئے ۔ذرائع نے بتایا کہ یہ لیڈی ہیلتھ ورکرز گزشتہ کئی برسوں سے پروگرام میں خدمات سرانجام دے کر ہر ماہ تنخواہیں وصول کررہی تھیں اور اب انہیں مستقل کیے جانے کا موقع آیا تو ان میں سے تقریباً 2 ہزار لیڈی ہیلتھ ورکرز کی عمریں 60سال سے زائد ہورہی ہیں جن میں سے متعدد کو لیٹر جاری کیے گئے لیکن انہیں مستقل ڈسٹرکٹ میں جوائننگ نہیں دی جارہی جبکہ متعدد کو لیٹر ہی نہیں دیے جارہے جس کی وجہ سے اب ان کی نوکریاں خطرے میں پڑنے اور تنخواہیں بھی بند ہونے کے امکانات پیداہوگئے ہیں جس کی وجہ سے ان کی فیملی میں تشویش کی لہر دوڑ گئی ہے ۔ متعدد لیڈی ہیلتھ ورکرز نے بتایا کہ جب سے نیشنل پروگرام شروع ہوا تھا وہ تب سے ہی خدمات سرانجام دے رہی ہیں اور اب جب انہیں مستقل کرنے کا وقت آیا تو انہیں ریٹائرڈ قرار دے کر پنشن سمیت دیگر سہولتیں فراہم کیے بغیر اچانک نوکریوں سے نکالنے کی تیاریاں کی جارہی ہیں جس کی وجہ سے وہ شدید پریشان ہیں۔انہوں نے کہاکہ اگر ان کی عمریں زائد ہیں تو انہیں باعزت طریقے سے ریٹائرڈ قرار دے کر تمام گریجویٹی اور پنشن دی جائے بصورت دیگر وہ شدید احتجاج کرنے پر مجبور ہوں گی۔اس حوالے سے آل پاکستان لیڈی ہیلتھ ورکرز ایسوسی ایشن کی صوبائی صدر حلیمہ لغاری نے کہا ہے کہ 60 سال سے زائد عمر کی دو ہزار لیڈی ہیلتھ ورکرز کو نوکری سے برطرف کیا گیا تو احتجاج کا راستہ اختیار کرنے پر مجبور ہوں گے ۔انہوں نے کہا کہ تمام لیڈی ہیلتھ ورکرز ہر دور میں دیانت داری سے خدمات سرانجام دیتی رہی ہیں جنہیں تمام الائونسز،پنشن ،سمیت دیگر سہولتیں فراہم کی جائیں تاکہ انہیں معاشی مشکلات درپیش نہ ہوں۔

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *

You may use these HTML tags and attributes: <a href="" title=""> <abbr title=""> <acronym title=""> <b> <blockquote cite=""> <cite> <code> <del datetime=""> <em> <i> <q cite=""> <strike> <strong>